تم لوگ امریکہ سے کیوں نہیں لڑتے

 

یہ ایک ایسا اعتراض ہے جو عرصہ دراز سے ٹی ٹی پی کے مجاہدین پر کیا جاتا ہے کہ تم لوگ پاکستانی فوج سےکیوں جنگ کرتے ہو، افغانستان میں جاکر امریکا سے کیوں نہیں لڑتے۔تو عرض یہ ہے کہ ۲۰۰۴سے پہلے مجاہدین، قبائل سے افغانستان میں ہی، امریکہ سے جنگ کرنے جاتے تھے،لیکن امریکہ کے وفادارکتے،

پاکستانی فوج نے ان پر وانا سمیت دیگر قبائل پر بمباریاں کر کے،جنگ کا رخ،خود اپنی طرف موڑا،لیکن یہ تو پراناواقعہ ہے،جو میں نے بیان کیا،ابھی کا ایک اور بالکل فریش واقعہ ،آپ کے سامنے بیان کر دوں ،تاکہ آپ کو بھی تھوڑا اندازہ ہوجائے،ابھی اپریل ۲۰۱۵ ہی میں آپ نے میڈیا میں یہ خبر سنی ہوگی،ملا سنگین زدران شہیدؒ کے بھائی کمانڈر فاروق زدران کو پاکستانی سیکیورٹی اداروں نے وانا میں شہید کردیا ہے،یہ گروپ افغانستان میں امریکہ کے خلاف جنگ لڑنے والا ایک بہت مضبوط گروپ ہے،اور پاکستان کے خلاف جنگ نہیں کرتا ہے،لیکن کیا کریں وفادارکتے نے مالک سے وفاداری تو نبھانی ہے،اب آپ کو کیا لگتا ہے،کہ وہ لوگ اپنے کمانڈر کا بدلہ پاکستان سے نہیں لیں گے، پاکستانی طالبان کو جنگ کا رخ بدلنے کے مشورے دینے کی بجائے،ذرا اپنی طرف کی اصلاح فرمائیں،تو بہترہوگا،امریکہ کے ڈالروں کی،جس فوج کو چاٹ لگی ہوئی ہے،اسے جاکرذرا سمجھائیں،کہ اگر وہ واقعی پاکستان کے ساتھ مخلص ہیں،تو امریکہ کی دفاداری سے باز آجائیں،پھر جنگ کا رخ بدل سکتاہے۔لیکن اگر باز نہیں آتے،تو پھر ردّعمل کے لئے بھی تیار رہیں۔۔۔  

بقلم عبداللّٰہ صدیقی

نوٹ:تحریر میں موجود باتیں مصنف کی ذاتی رائے ہے،ادارے کا انکی تمام باتوں سے متفق ہونا ضروری نہیں،اس لئے اسے ادارے کی پالیسی نہ سمجھا جائے۔